ضلع خیبر باڑہ:تین مہینوں میں ایک ہی بنک میں دو دفعہ ڈکیتی کی واردات

b8eff161-e3e1-4bfb-b65f-5495789a0642.jpg

اسلام گل آفریدی

ماضی قریب میں نہ صرف ضلع خیبر کیلئے بلکہ پورے ملک کے لئے ایک اہم تجارتی مرکز باڑہ بازار موجودہ وقت میں کئی اہم مسائل سے دوچار ہے۔ علاقے میں فوجی آپریشن کی وجہ سے ستمبر2009سے فروری 2015تک بندرہنے کے بعد تاجر برادری نے اپنی مدد آپ کے تحت انتہائی مشکل حالت میں باڑہ بازار میں دوبارہ تجارتی سرگرمیاں شروع ہوئی لیکن 21جنوری کو 2021کو تاریخ میں پہلی بار ایک نجی بنک سے ڈکیتی کے واراد ت میں چار مسلح افراد نے پینسٹھ لاکھ روپے لے اُڑے۔ واقعہ نہ صرف تاجر برادری بلکہ عام لوگوں کے لئے کافی تشویش ناک تھا۔

واقع کے حوالے سے جب تحقیقات کا آغاز ہوا اور مقامی پولیس نے مختلف علاقوں سے تیس سے زیادہ مشکوک افراد گرفتار کرلی۔تو انکا نہ سی سی ٹی فوٹیج سامنے آئی اور نہ گرفتار افراد کے حوالے سے میڈیا کو کچھ بتایا گیا۔ تاجر برادری کے جانب سے بھی کوئی مزمتی بیان یا احتجاج ریکارڈ نہیں کیاگیا۔

پولیس، تاجر برادری اور باڑہ کے عوام نے جان بوجھ کر شاید پہلے واقعے کے بارے میں اپنے آپ کو اس وجہ سے لاعلم قرار دیا کہ شاید یہ آخری واقعہ ہی ہو لیکن پورے تین ماہ بعد یعنی 21اپریل کو اُس بنک میں دوبارہ ڈاکؤوں نے دن دیہاڑے ڈاکہ ڈال کر لوٹا اور کامیاب کاروائی کے نتیجے میں آڑتالیس لاکھ روپے لوٹ لیکر فرارہونے میں کامیاب ہوئے۔

اس واقع سے ایک دن قبل قمبر آباد مارکیٹ کے قریب مسلح افراد نے ایک بندے سے پانچ لاکھ روپے اسلحہ نوک پر چھین کر فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔ ایک دن پہلے سہ پہر کو پرانے باڑہ بازار میں ذاتی دشمنی کے بناء مسلح افراد کے ایک مقامی شحص کو گولی مار کر قتل کردیا۔ حالیہ ایک کے بعد دیگرے بدامنی کے واقعات سامنے آنے کے بعد باڑہ میں علاقے میں امن وامان تاجربرادری کئی سوالات جنم لی ہے۔

مذکورہ واقعات پر میڈیا کی خاموشی کے حوالے سے بھی لوگ سوشل میڈیا اور نجی محفلوں میں مقامی صحافیوں کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔
مقامی تاجر واجد گل کاکہنا ہے کہ انتہائی مشکل حالت گزرجانے بعد علاقے میں امن قائم کردیا گیا ہے اور دوبارہ تجارتی سرگرمیاں دن بدن بہتری جانب گامز ن ہے لیکن بنک سے رقم چوری اور دیگر بدامنی کے واقعات سے تاجر برادری پریشان ہے۔

باڑہ تاجر یونین کے نومنتحب صدر معرا ج آفریدی کاکہنا ہے کہ دوفعہ ایک ہی بنک میں ڈکیٹی کے واردات قابل افسوس ہے اور اس قسم کے واقعات سے بازار میں تجارتی سرگرمیوں پر منفی اثرات مرتب ہونگے۔

ایک سوال کے جواب میں اُنہوں نے کہاکہ اب تک بنک اور قتل کے واقع کے حوالے سے تاجر برادری کا کو ئی اجلاس نہیں بولایا گیا ہے لیکن جلد اس قسم کے واقعات کے روک تھام کے لئے لائحہ عمل طے کر کے مقامی انتظامیہ اور پولیس حکام کے ساتھ ملاقات کرئینگے تاکہ علاقے میں امن وامان براقرا ر رکھ سکے۔مقامی انتظامیہ کے ایک اہلکارنے نام نہ ظاہر کرنے شرط پر بتایاکہ حالیہ واقعات کے حوالے تحقیقات کا عمل جاری ہے اب تک چند مشکوک افراد کو بھی گرفتار کرلی گئی ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

scroll to top