منشیات کے خلاف بونیر میں مقامی سطح پر گرینڈ جرگے کا انعقاد

d397c4ef-a1b1-441f-81f9-87aa21b02e9c.jpg

بونیر: نوجوان نسل کو صیحح راستے پر گامزن کرنے اور منشیات سے دور رکھنے کیلئے علاقے کی مشران اور مقامی انتظامیہ کا متفقہ طور پر  عوام میں آگاہی پھیلانے پر اتفاق ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ڈاگئ بونیر میں منشیات کے خلاف آگاہی بیداری مہم کے سلسلے میں ارشد اقبال کے زیر انتظام گاؤں کے ایک مقامی حجرے میں علاقہ خدوخیل کے عمائدین، علماء، محکمہ تعلیم اور ہر مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے معزز حضرات اور مشران کا ایک گرینڈ جرگہ منعقد ہوا ،جن میں قابل ذکر افراد میں شاہ جہان خان آف پنجتار،پی ایم ایل رہنما امین اللہ خان، مولانا فضل الرحیم، مولانا مظفر، سجاد سابقہ ناظم، مولانا بشیر، محمد امین پرنسپل، ایم پی اے تمریز خان،جاوید اقبال محکمہ مال اور محکمہ پولیس کے اہلکاروں کے علاوہ کثیر تعداد میں علاقے کے نوجوانوں نے شرکت کی۔

جرگہ سےخطاب کرتے ہوئے مذکورہ مقررین نےمنشیات کے خلاف آگاہی اور بیداری مہم پر زور دیا اور کہا کہ منشیات، چرس،آئس،شراب اور دیگر نشے معاشرے اور نئی نسل کے لئے ناسور اور تباہ کن ہیں۔

مقررین نے اس بات پر اتفاق کیا کہ اس موذی لعنت سے نجات دلانے کے لئے سب سے بڑی ذمہ داری والدین پر عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنی بچوں پر کڑی نظر رکھے اور اپنے بچوں سے انکے نقل و حرکت، آوارہ گردی،حرکات وسکنات کے متعلق بازپرس کریں ۔والدین کی سب سے پہلے ترجیح تو بچوں کو تعلیم دلانے پر ہونا چاہئے اور اسی طرح تعلیم کے علاوہ بچوں کو ایسی غیر نصابی سرگرمیوں میں مصروف رکھنا ہے کہ وہ منشیات کے لعنت سے بچ سکیں ۔

جرگے میں مقامی مشران نے کہا کہ والدین پر یہ ذمہ داری بھی عائد ہوتی ہے کہ کہ وہ نشے میں مبتلا اپنے بچوں کا علاج کرائیں اور اگر والدین مالی طور پر کمزور ہوں تو پھر مخبر حضرات ایسے بچوں کرائیں جو کہ صدقہ جاریہ ہے۔منشیات کے خلاف مہم کے لئے یہ بھی ضروری ہے ۔کہ والدین اپنے بچوں کی اخراجات پر کڑی نظر رکھیں۔

جرگے میں  یہ بھی  فیصلہ ہوا کہ منشیات کے خرید و فروخت کرنے والے عناصر اور منشیات کا استعمال کرنے والوں کے خلاف پولیس اور انتظامیہ کے ساتھ بھرپور تعاون کیا جائے گا اور پولیس بھی ایسے عناصر کے خلاف بلا امتیاز سخت قانونی کارروائی کریں ۔مقررین کی جانب سے حاضرین پر زور دیا گیا کہ جو بھی منشیات میں ملوث پایا گیا تو ایسے عناصر کی مدد کے لیے پولیس اور انتظامیہ کو کوئی سفارش نہیں کی جائی گی۔

جرگے میں عمائدین کی طرف سے  تجویز دی گئی کہ موٹرسائیکل کے بجائے سائیکل کے استعمال کرنے کی حوصلہ افزائی کی جائے اور غیر نصابی سرگرمیوں میں سایکل ریس کا انعقاد فائدہ مند ثابت ہوگا ۔آخر میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ مسقبل قریب میں علاقہ خدوخیل کے سطح پر منشیات کے علاوہ دیگر جرائم، قتل ،چوری،چکاری،غیرت کے نام پر قتل کے خلاف بھی ایک جرگہ منعقد کیا جائے گا ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

scroll to top