قبائلی اضلاع کو قومی دھارے میں لانے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں، شہرام ترکئی

33a94ec5-b443-4074-93f8-70e164655465.jpg

سفید احمد

پشاور:خیبر پختونخوا کے وزیر بلدیات بلدیات، الیکشنز و دیہی ترقی شہرام خان ترکئی نے کہا ہے کہ نئے ضم شدہ اضلاع کی ترقی اور انہیں قومی دھارے میں لانے کے لیے تمام تر وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں اور اس مقصد کے حصول کے لیے عالمی ادارے بھی مدد فراہم کر رہے ہیں۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار یو این ڈی پی کے تعاون سے ضم اضلاع کی تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشنز کی استعداد کار بڑھانے کے پراجیکٹ کے آغاز کے موقع پر کیا۔ محکمہ بلدیات خیبرپختونخوا کے زیر اہتمام نئے ضم شدہ اضلاع میں قائم ہونے والی نئی تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن (ٹی ایم ایز) کے ملازمین کی استعداد کار بڑھانے کے لیے یو این ڈی پی کے تعاون سے لوکل گورننس سکول پشاور میں ایک روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔

اس ورکشاپ میں نئے ضم شدہ اضلاع کی چار اور صوبے کے ترقیافتہ اضلاع کی چار تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کے افسران نے شرکت کی۔ ضم اضلاع اور صوبے کے ترقی یافتہ اضلاع کی چار چار ٹی ایم ایز کو جڑواں قرار دے کر ضم اضلاع کی ٹی ایم ایز کو یہ موقع فراہم کیا گیا کہ وہ ترقیافتہ اضلاع کی مستحکم اور خوشحال ٹی ایم ایز کی صلاحیتوں سے فائدہ اٹھا سکیں تاکہ ان کی اپنی استعداد کار میں خاطر خواہ اضافہ ہو۔ یہ صوبے کی تاریخ میں اپنی نوعیت کا پہلا پراجیکٹ ہے جس سے سات نئےضم اضلاع کی نوزائیدہ ٹی ایم ایز کو کم سے کم عرصہ میں اپنے پاؤں پر کھڑا ہونے اور عوام کو ڈیلیور کرنے کی صلاحیت حاصل کرنے میں مدد فراہم کرے گا۔

اورینٹیشنل ورکشاپ میں کوہاٹ، بنوں، تیمرگرہ، خار، میران شاہ، پاڑا چنار اور صدا ٹی ایم ایز کے سینئر افسران نے شرکت کی۔ ورکشاپ میں اس بات کا تعین کیا گیا کہ نئی ٹی ایم ایز کو سروس ڈیلیوری، پلاننگ، بجٹنگ اور قوانین کے نفاذ میں سے کسی شعبہ میں مشکل کا سامنے ہے تو ترقیافتہ اضلاع کی ٹی ایم ایز ان شعبوں میں تجربہ، مدد اور سسٹم فراہم کریں گی۔

جڑواں پروگرام کو آپریشنلائز کرنے کے لیے ٹی ایم ایز کے نمائندوں نے ایک ورک پلان ترتیب دیا جس کے تحت یہ امور سرانجام دئیے جائیں گے اور ضم اضلاع کی ٹی ایم ایز کا دورہ کیا جائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

scroll to top