دودھ میں ملاوٹ کرنے والوں کو کڑی سزائیں دی جائیں،محمود خان

cm-e1555008712730.jpg

پشاور: خیبر پختونخوا کے وزیراعلیٰ محمود خان نے دودھ میں ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن لینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دودھ میں ملاوٹ کرنے والوں کو سخت سے سخت سزائیں دی جائیں اور موقع پر بھاری جرمانہ کیا جائے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں ایک اہم اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا اجلاس میں صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی، وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے میڈیا افتخار درانی، وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے ضم اضلاع اجمل وزیر اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

اجلاس میں وزیر اعلیٰ کو بتایا گیا کہ دودھ میں پچیس قسم کے خطرناک ٹاکزک کمیکل کی ملاوٹ کی جاتی ہے جس سے انسانی زندگی کو شدید خطرات لاحق ہو سکتے ہیں وزیر اعلیٰ نے انتظامیہ کو سختی سے ہدایت کی کہ دودھ میں ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف صوبے بھر میں کریک ڈاؤن شروع کیا جائے اور اس معاملے میں کسی کے ساتھ بھی نرمی نہ بر تی جائے۔

انہوں نے کہا کہ وہ ہر حال میں اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ صوبے سے مضر صحت اشیائے خوردونوش اور دودھ کا صفایا ہو وزیر اعلیٰ نے کمشنرز ڈپٹی کمشنرز اور ٹی ایم ایز کو پلاسٹک بیگز کے خلاف بھی فوری ایکشن لینے کی ہدایت کی اور کہا کہ کسی بائیو ڈی گریڈبل شاپنگ بیگز کے علاوہ تمام پلاسٹک شاپنگ بیگز کو ختم کیا جائے کیونکہ اس سے ماحولیات کو شدید خطرات لاحق ہیں۔

وزیر اعلیٰ نے اجلاس میں پی اینڈ ڈی کو بھی ہدایت کی کہ پشاور کوہاٹ مردان سوات اور ایبٹ آباد کے لیے دور جدید کے تقاضوں کے مطابق ماسٹر پلان بھی بنایا جائے ۔

وریر اعلیٰ نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں دوسرے صوبوں سے آنے والے دودھ کو چیک کرنے کے لیے ڈیرہ اسمعیل خان اور اٹک کے مقام پر دودھ چیکنگ پوائنٹس بنائے جائیں اور جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے دودھ کے ٹیسٹ کیے جائیں تاکہ مضر صحت دودھ خیبر پختونخوا میں نہ آ سکے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

scroll to top