قبائلی نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرینگے ،ڈاکٹر امجد

44a85525-4184-4d8f-9008-dd38cce20721-e1553879121841.jpg

پشاور : خیبر پختونخوا کے وزیر معدنیات ڈاکٹر امجد علی نے کہا ہے کہ نئے ضم شدہ اضلاع کے معدنیات کے ذخائر کو قبائلی عوام کے معیار زندگی کو بہتر بنانے ، قبائلی نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے ، غربت کے خاتمے اور وہاں کے عوام کے صحت و تعلیم کیلئے استعمال میں لایا جائے گا ۔اس مقصد کے لئے معدنیات کے لیز میں مقامی لوگوں کو پہلی ترجیح دینے کیلئے قانون میں ترمیم کی گئی ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کے روز اپنے دفتر پشاور میں صوبائی حکومت کے ترجمان اجمل خان وزیر سے خصوصی ملاقات کے دوران کیا۔ اجمل خان وزیر نے وزیر معدنیات کو قبائل کے تحفظات اور معدنیات سے متعلقہ مسائل سے آگاہ کیا ۔

ڈاکٹر امجد علی نے کہا کہ  صوبائی حکومت نئے ضم شدہ اضلاع کو خصوصی توجہ دے رہے ہیں اور یہ علاقے سونے ، چاندی ، پلاٹینئم ، کوپر ، کرومائیٹ ، کوئلہ اور دیگر قیمتی پتھروں سے مالامال ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے ماضی میں حکومتوں کی عدم توجہ اور کرپشن کی وجہ سے سابقہ فاٹا کے ان بیش بہا خزانوں سے چند مخصوص مافیا لوگ فائدہ اٹھاتے تھے ، لیکن اب وقت اگیاہےکہ ان خزانوں کو دریافت کرکے ان کو عوام میں تقسیم کیا جائے تاکہ یہاں بھی خوشحالی آجائے اور یہاں کے جوان باہر ملکوں میں نوکریوں کی تلاش میں مارے مارے پھرنے کے بجائے اپنے وسائل کے مالک بن جائے۔

ڈاکٹر امجد نے  کہا کہ ان کو قبائلی عوام کے محرومیوں کااخساس ہے اور قبائلی عوام کے تمام تحفظات کو دور کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع کے انضمام سے وہاں کے عوام کو فائدہ کو ہوگا اور قبائلی عوام کے محرومیوں کو ختم   کیاجائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

scroll to top