باچاخان کے فلسفے پر چلتے ہوئے پختون قوم کو متفق کرنا ہے،نثارمہمند

111256385_1654903928019112_2391814335166386702_n.jpg

خیبر:باڑہ فرنٹیئر روڈ پر چراغ سکول کے قریب عوامی نیشنل پارٹی  کی طرف سے قومی جرگہ کے قیام کا فیصلہ کیا گیا جس میں قبائلی اضلاع میں جاری تنازعات کے حل کے لئے کوشش کی جائی گی ۔ولی خان بابا کے فلسفے پر چلتے ہوئے پختون قوم میں اتحاد اور اتفاق پیدا کرنا ہے۔

تقریب میں ایم پی اے نثار مہمند ،شیخ جہانزیب ،مثال اورکزئی اور شاہ حسین شنواری ، عمران لالا،چراغ،شیرین آفریدی ،عمران جونیئر اور امیر شاہ آفریدی شامل تھے ۔قومی جرگہ کے صدر نثار مہمند اور جنرل سیکرٹری مثال خان منتخب کئے گئے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ایم پی اے نثار مہمند نے کہا کہ اس قومی جرگہ کا مقصد قبائلی اضلاع میں تنازعات کو ختم کرنا ہے اور انضمام سے پیدا ہونے والے پیچیدگیوں کو ختم کرنا ہے۔ ولی خان بابا اور باچاخان کے فلسفے پر چلتے ہوئے پختون قوم کو متفق کرنا ہے۔ان کے فلسفے سے پوری دنیا باخبر ہے کہ باچاخان کے عدم تشدد کا فلسفے پر عوامی نیشنل پارٹی قائم دائم ہے۔

انضمام کے باوجود ان علاقوں کو حکومت کچھ نہیں دے رہے جن سے قبائلی لوگوں کی ترقی ممکن ہوجائے  اور زندگی مین تبدیلی آجائیں جس کی وجہ سے یہاں کے لوگوں کو اب انضمام سے بدزن کررہے ہیں۔جرگہ پختون کی روایات میں شامل ہے لیکن ان لوگوں نے ہمارے جرگے کو بدنام کردیا ہیں۔ہم نے ایک کوشش شروع کی ہیں کہ پختون قوم میں بلخصوص قبائلی اضلاع میں جتنے تنازعات ہے ان کو ختم کرنے کی کوشش کی جائی گی تاکہ پختون ایک قوم بن کے ترقی کے راہ پر گامزن ہوں ۔

انہوں نے کہ ضم اضلاع میں حالیہ زمینی تنازعات نے اور قوموں کے درمیان حدبندیوں کی وجہ سے ایک بار پھر ایک نئے فسادات میں دھکیل رہے ہیں۔ہم اپنے مسائل خود حل کرینگے تاکہ علاقے اور قبیلے ترقی کرکے ایک بہتر مستقبل سنوار سکے ۔قومی جرگہ مسائل حل کرنے کی کوشش کرینگے لیکن اگر ہمارے مشران کی ضرورت پڑی تو وہ خود یہاں آکر اس میں حصہ لینگے ۔

تقریب سے دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا اور باچاخان کے فلسفے اور قومی جرگے پر بات کی ۔انہوں نے کہا کہ اس عمل کا قیام بہت ضروری تھا جس سے انضمام سے پیدا ہونے خدشات کو دور کرنے کی کوشش کی جائی گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

scroll to top