پُر امن سیاسی جدوجہد کے ذریعے اپنی حقوق سے دستبرار نہیں ہونگے،علی وزیر

95381597_10224520102452324_8481947723925291008_n.jpg

بشکریہ (ای پی اے)

ڈیرہ اسماعیل خان: پختون تحفظ موومنٹ کے رہنما عارف وزیر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے اسلام آباد کے پمز ہسپتال میں ہفتے کے روز دم توڑنے کے بعد انکی جسد خاکی کو جنازے کیلئے ڈیرہ اسماعیل خان روانہ کردیا گیا جہاں شہر کے مضافتی علاقے ظفر آباد میں تحریک کے ان گنت کارکن پہلے سے موجود تھے۔

بشکریہ (ای پی اے)

جنازے کے ادا ہونے سے قبل تحریک کے سرگردہ رہنماوؤں رکن قومی اسمبلی اور عارف وزیر کے چچا زاد بھائی علی وزیر، شمالی وزیرستان سے رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ اور تحریک کے روح رواں اور بانی منظور پشتین نے مختصر خطاب کیا۔

بشکریہ (ای پی اے)

علی وزیر نے  مجمے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عدم تشدد پر عمل پیرا ہوکر ہم اپنے حقوق کی جنگ لڑینگے،انہوں نے کہا کہ اگر میرے گھر کا ایک بھی فرد رہا تو بھی یہ پُرامن اور عدم تشدد پر مبنی تحریک کیلئے کام جاری رکھے گا۔

رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ نے کہا کہ عارف وزیر کا کسی کے ساتھ کوئی ذاتی دشمنی نہیں تھی بلکہ پشتون قوم کے حقوق اور عزت کی خاطر اپنی جان کو ہتھیلی پر رکھ کر اس فانی دنیا سے چلے گئے۔انہوں نے کہا کہ آج عارف کا نظریہ جیت گئی ہے اور وزیرستان میں امن کے نہ چاہنے والوں کا نظریہ ہار گیا ہے۔

بشکریہ (ای پی اے)

مجمے سے خطاب کرتے ہوئے تحریک کے بانی منظور پشتین نے کہا کہ عدم تشدد پر مبنی ہمارا یہ پر امن تحریک جاری رہے گا،ہم نے ان حالات کا مقابلہ پہلے بھی کیا ہے اور اب بھی کریں گے لیکں ایسے واقعات ہم کو اپنے پر امن سیاسی جدوجہد سے نہیں ہٹا سکتے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنا منزل معلوم ہے اور عدم تشدد پر عمل پیرا ہوکر ہم اہنی سفر کو جاری رکھیں گے۔

بشکریہ (ای پی اے)

بشکریہ (ای پی اے)

ان متخصر خطابات کے بعد مرحوم عارف وزیر کا جنازہ ادا کردیا گیا جس میں ہزاروں کی تعداد میں تحریک کے کارکن شریک ہوئے۔

جنارے کے بعد عارف وزیر کے میت کو وانا روانہ کردیا گیا جہاں کل 11 بجے جنازے کے بعد اُنکے آبائی قبرستان میں تدفیں ہوگی۔

یاد رہے کہ جمعے کو رکن قومی اسمبلی علی وزیر کے چچا ذاد بھائی اور پختون تحفظ مومنٹ کے سرکردہ رہنما عارف وزیر کو وانا میں گھر کے سامنے نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے شدید زخمی کر دیا۔

انہیں علاج کے لیے اسلام آباد کے پمز ہسپتال منتقل کر دیا گیا لیکن جانبر نہ ہوسکے۔

دوسری طرف خیبر پختونخوا حکومت کے مشیر اطلاعات اجمل وزیر عارف وزیر کے قتل کی مذمت کی ہے اور کہا کہ غم اور دکھ کی اس  گھڑی میں عارف وزیر کے خاندان کے ساتھ برابر کے شریک ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان مقامی پولیس اور ضلعی انتظامیہ کو عارف وزیر کے قتل کی تحقیقات کے لئے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔اُنکا مزید کہنا تھا کہ عارف وزیر کے قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچانے میں کوئی کسر نہ چھوڑی جائے گی۔۔

 

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

scroll to top