قبائلی اضلاع میں سول انتظامیہ کی رٹ کمزور ہے،آفتاب شیرپاؤ

Picture-2-e1561228414148.jpg

پشاور: قومی وطن پارٹی کے چیئرمین آفتاب احمد خان شیرپاؤ نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے اپنی ناقص معاشی پالیسیوں کی وجہ سے عوام کی مشکلات میں اضافہ کردیا ہے ۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے وطن کور پشاور میں پارٹی کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں قومی وطن پارٹی کے رہنماء سکندر حیات خان شیرپاؤ کے علاوہ حاجی محمد غفران،محمدجمیل ایڈوکیٹ،ہاشم بابر،اسدآفریدی ایڈوکیٹ،عدنان وزیر اور ڈاکٹر عالم یوسفزئی نے شرکت کی۔

آفتاب شیرپاؤ نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ڈکٹیشن کے نتیجے میں بننے والے بجٹ سے ملک میں مہنگائی کی نئی لہر شروع ہو جائے گی۔انھوں نے قبائلی اضلاع میں صوبائی اسمبلی کی نشستوں کیلئے ہونے والے انتخابات فوج کی نگرانی میں کرانے کے فیصلے پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ قبائلی اضلاع میں سول انتظامیہ کی رٹ کمزور ہے۔

انھوں نے کہا کہ حکومت کو اس فیصلے کو واپس لینا چاہیے۔آفتاب شیرپاؤ نے حکومت زور دیا کہ بجلی خالص منافع کے بقایا جات فوری طور پر خیبر پختونخوا صوبے کے حوالے کرے۔

آفتاب شیرپاؤ نے میڈیا پر عائد پابندیاں اٹھانے کامطالبہ کیا اور کہا کہ اس سے صحافت کی آزادی سلب کی گئی ہے۔اجلاس کے دوران انھوں نے اعلان کیا کہ ان کی جماعت بہت جلد عوامی رابطہ مہم شروع کرے گی تاکہ مہنگائی اور حکومت کی غلط پالیسیوں کے خلاف احتجاج ریکارڈ کیا جاسکے۔

انھوں نے کہا کہ قومی وطن پارٹی حزب اختلاف کی جانب سے بلائی جانے والی آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کرے گی۔انھوں نے کہا کہ بی آر ٹی منصوبے میں باقاعدگیوں کے بارے میں آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی رپورٹ قومی احتساب بیورو کی آنکھیں کھولنے کیلئے کافی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

scroll to top